جلسے کی اجازت نہ دے کر حکومت نے اپنی بدنیتی ظاہر کردی۔ میاں افتخارحسین

ویب ڈیسک:میاں افتخارحسین کا کہنا تھا کہ جلسے کی اجازت نہ دے کر حکومت نے اپنی بدنیتی ظاہر کردی ہے، اس قسم کے ہتھکنڈوں سے پی ڈی ایم کو ناکام نہیں بنایا جاسکتا، رکاوٹیں عوام کا راستہ نہیں روک سکتی، حکومت کا ڈر مزید عیاں ہوگیا ہے، بینرز، بورڈز اور فلیکسز ہٹانے کیلئے سرکاری مشینری کا استعمال کیا جارہا ہے،
عوامی نیشنل پارٹی اس جلسے میں تاریخی شرکت کرے گی، سرخ سیلاب 22نومبرکو پشاور کا رخ کرے گا، اگر رکاوٹیں کھڑی کی گئیں تو ایک جلسہ سینکڑوں جلسوں کی شکل اختیار کرسکتا ہے، رکاوٹیں کھڑی کرنے کی صورت میں پشاور سمیت پورے صوبے میں جلسے ہوں گے، تمام رکاوٹوں کو توڑ کر عوام پشاور پہنچیں گے اور نااہل حکومت سے چھٹکارا حاصل کریں گے، کورونا کا بہانا بنانے والے سن لیں کہ پھر ہر جگہ عوام کا سمندر اکھٹا ہوگا جس کو کنٹرول کرنا اس سلیکٹڈ حکومت کے بس کی بات نہیں ہوگی، ہم پرامن لوگ ہیں اور پرامن احتجاج عوام کاآئینی و قانونی حق ہے، کورونا وبا کے آڑ میں حکومت کی نااہلی نہیں چھپائی جاسکتی، انکی نااہلی عوام جان چکی ہے، جلسے کو فول پروف سیکیورٹی دینا حکومت کی ذمہ داری ہے، کسی بھی واقعے کی ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی،عوامی نیشنل پارٹی سمیت تمام سیاسی جماعتوں کی تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں،عوامی سمندر 22نومبر کو اس سلیکٹڈ حکومت کے خلاف اپنا فیصلہ سنائے گی۔