ایمان مزاری درج مقدمہ منسوخ

ایمان مزاری کے خلاف درج مقدمہ منسوخ

پولیس نے وفاقی وزیر شیریں مزاری کی صاحبزادی ایڈوکیٹ ایمان زینب مزاری سمیت بلوچ طلبا کے خلاف درج مقدمہ واپس لے لیا۔

چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے مقدمہ اخراج کی درخواست پر سماعت کی، ایمان مزاری کی جانب سے زینب جنجوعہ ایڈوکیٹ عدالت میں پیش ہوئے۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیے کہ ہم کہہ چکے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کے آرڈر کے بغیر ایسے کیسز میں گرفتاری نہیں ہو سکتی۔

مزید پڑھیں:  عید قربان: دریائے سندھ میں نہاتے ہوئے مرنے والوں کی تعداد 10 ہوگئی

ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ ایمان مزاری اور بلوچ طلبا کے خلاف ایف آئی آر منسوخ کردی گئی ہے۔

زینب جنجوعہ ایڈوکیٹ نے کہا کہ دفعہ 144 کا غلط استعمال کیا جاتا ہے، چاہتے ہیں عدالت اس کی وضاحت کرے۔

مزید پڑھیں:  الیکشن ٹربیونل کیس اہم، 30 اگست تک کچھ نہ کچھ ہو کے رہے گا، شیخ رشید احمد

یاد رہے کہ وفاقی وزیر شیریں مزاری کی بیٹی ایمان مزاری نےمقدمہ اخراج کیلئے عدالت سے رجوع کیا تھا، عدالت نے وزارت داخلہ، وزارت انسانی حقوق اور آئی جی اسلام آباد کو نوٹس جاری کیے تھے۔ گزشتہ سماعت پر عدالت نے بلوچ اسٹوڈنٹس کی لسانی پروفائلنگ کرنے پر برہمی کا اظہار کیا تھا۔