عثمان ڈار کی رہائشگاہ فیکٹری سیل

پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈار کی رہائشگاہ، فیکٹری اور سیکرٹریٹ سیل

سیالکوٹ میں پاکستان تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈارکی رہائش گاہ، فیکٹری اور سیکرٹریٹ کو سیل کر دیا گیا۔
ویب ڈیسک: ضلعی انتظامیہ کے مطابق پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈاراور عمر ڈار دہشت گردی سمیت متعدد مقدمات میں اشتہاری ہیں، جائیدادوں کو عدالتی حکم پر سیل کیا گیا ہے۔
ضلعی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ سول جج قدسیہ بانو کے حکم پر جائیداد سیل کر کے قرقی کے نوٹسز لگا دیے گئے ہیں۔
ذرائع کے مطابق سیالکوٹ میں ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی بھاری نفری عثمان ڈار کی رہائش گاہ، فیکٹری اور سیکرٹریٹ کے باہر موجود ہے۔
دوسری جانب سوشل میڈیا پر بیان جاری کرتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈار نے کہا کہ سیالکوٹ میں میرا گھر، فیکٹری، کاروبار مکمل سیل کر دیا گیا ہے، جناح ہاؤس سمیت ہر قسم کی پراپرٹی کو سیل کر کے میری بوڑھی والدہ، اہل خانہ اور بچوں کو گھر سے نکال دیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ریاستی مشینری پوری قوت سے میرے خاندان پر ٹوٹ پڑی ہے، ماؤں بہنوں اور بیٹیوں کے سر سے چادر چار دیواری کھینچنے والے اللہ کے انصاف سے ڈریں، آزاد ملک میں ہم سے جینے کا رہنے کا حق چھین لیا گیا ہے، جعلی مقدمات بنا کر انتقامی کارروائی کیلئے اپنی ہی سر زمین پر اشتہاری بنا دیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ میرے گھر کی پردہ دار خواتین اور بچوں کو گھر سے نکال کر سڑک پر چھوڑ دیا گیا ہے، میری بیوہ ماں، اہلیہ اور بہنوں کو زبردستی گھر سے نکال کر میرا اور میرے خاندان کا مکمل کاروبار سیل کر دیا گیا ہے۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ کم از کم ڈھائی ہزار افراد فیکٹریوں میں کاروبار کرتے ہیں۔
جو پراپرٹیز کو سیل کیا گیا ہے، وہ میرے اکیلے کی ملکیت نہیں ہیں۔

مزید پڑھیں:  جعلی حکومت کے خلاف منظم عوامی جدوجہد ناگزیر ہے، اسد قیصر