پشاور کے خواجہ سرا سے زیادتی

پشاور کے خواجہ سرا سے زیادتی کے بعد بدستور دھمکیاں

ویب ڈیسک(پشاور): پشاور کے خواجہ سرا سے زیادتی کے بعد دھمکیوں کاسلسلہ رک نہ سکا، حیل عرف صدف نامی خواجہ سرا نے بڈھ بیر پولیس سٹیشن میں راز خان اور طارق کےخلاف جنسی زیادتی کا مقدمہ درج کیا تھا، ایف آئی آرکے مطابق بڈھ بیر بازید خیل میں2 افراد نے خواجہ سرا کو پروگرام کے بہانےلےجاکراسلحہ کی نوک پر زیادتی کا نشانہ بنایا۔

خواجہ سرا صدف نے مشرق ٹی وی سےبات چیت کرتے ہوئےکہا کہ یہ واقعہ دو ہفتے پہلے پیش آیا تھا اور پروگرام سے واپسی پر اسلحہ کی نوک پر ہمیں زبردستی نامعلوم مقام پر لے جا کر جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا، انہوں نے کہا کہ اس واقعہ کے بعد دھمکیوں سے دو بار راز خان اور طارق خان کے حجرے میں میوزیکل پروگرام بھی کیا لیکن ان کی ڈیمانڈ اب حد سے تجاوز کر چکی ہے۔

صدف کا کہنا تھا کہ روزانہ کی بنیاد پر جان سے مارنے کی دھمکیاں مل رہی ہیں، خواجہ سرا سویرا کے مطابق پولیس نے ایف آئی آر درج کرنے میں بھی چار دن تاخیر کی اور میڈیکل رپورٹ کی مجبوری کے تحت پولیس کو ایف آئی آر درج کرنا پڑی، پولیس نے ملزموں سے صلح کرنے کیلئے کہا اور ساتھ میں خبردار بھی کیا کہ نامزد ملزم علاقے کے با اثر اور خطرناک لوگ ہیں اور بہتر یہی ہوگا کہ تم لوگ آپس میں صلح کرلو۔

پولیس نےخواجہ سرا کےالزامات مسترد کرتے ہوئےکہا ہے کہ متاثرہ خواجہ سرا وقوعہ کی نشاندہی نہیں کر رہے تھے اور بعد میں نشاندہی پر ایف آئی آر اسی وقت درج کی گئی، پولیس کا کہنا تھا کہ نامزد ملزموں کے خلاف پہلے بھی کارروائی ہوئی ہے اور ملزموں نے عدالت سےضمانت قبل از گرفتاری کروائی ہے۔

مزید دیکھیں :   گلبہارمیں محفل موسیقی پر چھاپہ،خواتین سمیت7گرفتار