ارشد شریف قتل کیس

ارشد شریف قتل کیس: سپریم کورٹ کے حکم پر سپیشل جے آئی ٹی تشکیل

صحافی ارشد شریف قتل کیس کی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ کے حکم پر نئی سپیشل جے آئی ٹی تشکیل دے دی گئی، عدالت نے جے آئی ٹی سے 2 ہفتوں میں عبوری پیش رفت رپورٹ طلب کر لی۔
ویب ڈیسک: چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بنچ کے روبرو سماعت کے دوران ڈی جی ایف آئی اے سمیت دیگر کمرہ عدالت میں موجود تھے، اس موقع پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل عامر رحمان نے نئی اسپیشل جے آئی ٹی کا نوٹیفکیشن عدالت میں پیش کر دیا، انہوں نے عدالت کو بتایا کہ نئی سپیشل جے آئی ٹی 5 ارکان پر مشتمل ہے۔
عدالت کے حکم پر بنائی گئی خصوصی تحقیقاتی ٹیم میں ڈی آئی جی اسلام آباد اویس احمد شامل ہیں، اس کے علاوہ اسپیشل جے آئی ٹی میں ڈائریکٹر سائبر کرائم ایف آئی اے وقارالدین سید بھی شامل ہیں۔
آئی بی سے ساجد کیانی اور ایم آئی سے مرتضی افضل اسپیشل جے آئی ٹی میں شامل کیا گیا ہے جبکہ آئی ایس آئی سے محمد اسلم بھی اسپیشل جے آئی ٹی کے رکن ہیں۔
یاد رہے کہ گزشتہ روز چیف جسٹس پاکستان نے وفاقی حکومت کی جانب سے ارشد شریف قتل کیس کی تحقیقات کے لیے قائم کی گئی جے آئی ٹی کو مسترد کرتے ہوئے نئی اسپیشل جے آئی ٹی تشکیل دینے کا حکم دیا تھا۔

مزید دیکھیں :   ایران میں آذربائیجان کے سفارت خانے پر فائرنگ،سیکورٹی چیف ہلاک