چمن میں افغان بارڈر سیکیورٹی فورسز کی جانب سے بلا اشتعال گولہ باری پر اسلام آباد میں افغان ناظم الامور کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے احتجاج کیا گیا۔

چمن میں فائرنگ کے واقعے پر پاکستان کا افغانستان سے شدید احتجاج

چمن میں افغان بارڈر سیکیورٹی فورسز کی جانب سے بلا اشتعال گولہ باری پر اسلام آباد میں افغان ناظم الامور کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے احتجاج کیا گیا۔
ویب ڈیسک: ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق چمن میں افغان بارڈر سکیورٹی فورسز کی جانب سے بلااشتعال گولہ باری کے واقعات کی شدید مذمت کی گئی، چمن فائرنگ کے نتیجے میں جانی نقصان ہوا، شہری زخمی ہوئے اور املاک کو نقصان پہنچا۔
ترجمان کا کہنا تھاکہ شہریوں کا تحفظ دونوں فریقین کی ذمہ داری ہے، فائرنگ کے واقعات کی تکرار کو روکنا ضروری ہے، پاکستان افغانستان کے ساتھ برادرانہ تعلقات برقرار رکھنے کے لیے پرعزم ہے۔
یاد رہے کہ گزشتہ روز بارڈر پر پاکستانی اور افغان فورسز کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا تھا، افغان فورسز کی جانب سے پاکستان کی شہری آبادی پر مارٹر گولے اور آرٹلری کا بے دریغ استعمال کیا گیا جس میں خواتین اور بچوں سمیت 20 افراد زخمی ہوئے تھے۔
پاکستانی فورسز کی جانب سے بھی بھرپور جوابی کارروائی عمل میں لائی گئی تھی اور افغان چیک پوسٹوں کو تباہ کیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں:  اسرائیل ایران تنازعہ ہمیں عالمی جنگ کی طرف دھکیل سکتا ہے، ٹرمپ