معاشی بحران

معاشی بحران سے نکلنے کیلئے بڑے فیصلے کرنا ہوں گے، اسحاق ڈار

وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ حکومت کے پاس معاشی بحران حل کرنے کیلیے کوئی جادو کی چھڑی نہیں،تمام سیاسی جماعتیں فیصلہ کریں کہ ملک کو معاشی طور پر مستحکم کرنا ہے، معاشی بحران سے نکلنے کیلئے بڑے فیصلے کرنا ہوں گے۔
ویب ڈیسک: اسلام آباد کے جناح کنونشن میں منعقدہ باچا خان کانفرنس میں حکومتی پالیسیوں پر تنقید پر ردعمل دیتے ہوئے اسحاق ڈار نے کہا کہ معاشی بحران پانچ سال کی تباہی کا نتیجہ ہے، بحران کے حل کیلیے بڑے فیصلے کرنے ہوں گے۔
انہوں نے کہا کہ مسائل کے حل کیلئے مذاکرات ہی واحد راستہ ہیں، ملک کا سب سے بڑا مسئلہ اور چلینج دہشت گردی ہے جس کو حل کرنے کا واحد راستہ بات چیت ہے کیونکہ تشدد سے کوئی مسئلہ کبھی حل نہیں ہوا۔
وزیر خزانہ نے مزید کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر بھی اُس طرح عمل نہیں ہوا جیسے ہونا چاہیے تھا، بد قسمتی سے اہم سیاسی شخصیات بھی دہشت گردی کا نشانہ بنیں
ان کا کہنا تھا کہ ہم نے اپنے وسائل سے دہشت گردی کے خلاف کامیاب جنگ لڑی، ہمیں ماضی کی غلطیوں سے سیکھ کر آگے بڑھنا ہو گا۔
انہوں نے کہا کہ ہماری افواج ملک کے تحفظ کیلئے جانوں کی قربانیاں دے رہی ہیں، سیاست کا محور عوامی خدمت ہونی چاہیے۔

مزید پڑھیں:  ایام تشریق کا اختتام،پاکستانی عازمین کی واپسی کل سے شروع ہوگی