عدلیہ کی غیرجانبداری

عدلیہ کی غیرجانبداری پر اب سوال اٹھ رہے ہیں، وفاقی وزیر داخلہ

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کا کہنا ہے کہ عدلیہ کے فیصلوں کا بے پناہ احترام ہے لیکن عدلیہ کی غیرجانبداری پر اب سوال اٹھ رہے ہیں۔
ویب ڈیسک: اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے رانا ثناء اللہ کا کہنا تھا کہ آج کے دن کی خواتین کے حوالے سے بڑی اہمیت ہے، لاہور میں ایک عورت مارچ ہو رہا ہے، اس کی مخالفت میں حیا مارچ کا بھی پروگرام ہے، ایسی صورتحال میں لاہور میں کوئی بھی واقعہ رونما ہوسکتا ہے، اداروں کی رپورٹ کے بعد لاہور میں دفعہ 144 نافذ کی گئی۔
انہوں نے کہا کہ اس موقع پر فتنہ خان نے اپنے فتنے کو بھی اجاگر کرنا مناسب سمجھا، عمرانی ٹولہ کسی قانون کو خاطر میں نہیں لاتا، لاہور میں عمرانی فتنے نے برگر مارچ کا اعلان کیا ہے، ایک طرف عمران خان کی ٹانگ پر پلستر اور دوسری طرف احتجاج کر رہے ہیں، یہ شخص کسی قیمت پر فتنہ گری سے پیچھے ہٹنے کو تیار نہیں۔
وزیر داخلہ کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان صحت مند ہوگئے ہیں تو عدالتوں کا سامنا کریں، انہیں معلوم ہے کہ اپنے خلاف 3 کیسز میں دفاع کے لئے ان کے پاس پیش کرنے کو کچھ نہیں، عدالتیں عمران خان سے جواب مانگ رہی ہیں، ریلیف بنتا ہو یا نہ بنتا ہو آپ کو ریلیف مل جاتا ہے، آپ ایک بہانہ تراشتے ہوئے عدالتوں میں پیش نہیں ہونا چاہتے۔
انہوں نے کہا کہ اُمید ہے عمران خان 13 مارچ کو عدالت میں پیش ہوں گے، 13 مارچ کو اگر عمران خان پیش نہ ہوئے تو قانون کے مطابق گرفتار کیا جائے گا، عمران خان کے ساتھ عدالت کی مزید مہربانی پر سوال اٹھ رہے ہیں۔
رانا ثناء اللہ نے مزید کہا کہ فرح گوگی 12 ارب روپے لے کر باہر بیٹھی ہے جس کا نیب میں ریکارڈ ہے، قومی خزانے کو 50 ارب کا ٹیکہ لگا گیا، عمران خان اپنے انجام کو پہنچے گا تو ملک میں بہتری آئے گی۔

مزید پڑھیں:  دھمکی آمیز خطوط: چیف جسٹس اسلام آبادہائیکورٹ نےفل کورٹ اجلاس بلالیا