قرآن کی توہین

قرآن کی توہین امت مسلمہ کیلئے نا قابل برداشت ہے، مولانا فضل الرحمان

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ سویڈن میں ایک سے زیادہ مرتبہ قرآن کی توہین کی گئی، قرآن کی توہین ہمارے لیے کسی قیمت قابل برداشت نہیں، امت مسلمہ اسے اپنے خلاف اعلان جنگ سمجھتی ہے۔
ویب ڈیسک: کراچی پریس کلب کے باہر حرمت قرآن مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے سربراہ جے یو آئی مولانا فضل الرحمان کا کا کہنا تھا امت مسلمہ ایسے واقعات کو اپنے خلاف اعلان جنگ سمجھتی ہے، اگر مسلمان بپھر گئے تو کرہ ارض پر تمہیں جگہ نہیں ملےگی۔
مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا مسلمان وسیع النظر ہیں، ہم قرآن کو اللہ کی کتاب کہتے ہیں تو انجیل و توریت کو بھی اللہ کی کتاب کہتے ہیں، محمدﷺ کو اللہ کا نبی کہتے ہیں تو عیسیٰ علیہ السلام اور موسیٰ کلیم اللہ کو بھی اللہ کا نبی کہتے ہیں، تم اپنی کتابوں کی حفاظت نہیں کر سکتے، وہ تم ہو جس نے توریت اور انجیل کا حلیہ بگاڑ دیا ہے۔
ان کا کہنا تھا ہم تمام پیغمبروں کو اپنا پیغمبر سمجھتے ہیں، تم قرآن جلا رہے ہو تو تم تنگ نظر ہو، تم اسلام اور مسلمان کو برداشت نہیں کر سکتے، دنیا دیکھ لے قرآن پاک اور نبی کریم ﷺ کی حرمت پر امت متحد ہے، ہم مل کر مطالبہ کرتے ہیں کہ سفیر واپس نہ بلائے تو یہ احتجاج چلتا رہے گا، مسلمان ممالک سویڈن سے اپنےسفیر واپس بلائیں۔
سربراہ جے یو آئی کا کہنا تھا قرآن کریم کی بے حرمتی کسی صورت قابل برداشت نہیں ہے، مسلمان اپنے خون کا نذرانہ پیش کر کے قرآن کی حفاظت کریں گے، امریکا اور مغربی ممالک سے کہتا ہوں تم نے اسلام کو ختم کرنے کے منصوبے بنائے تھے، دنیا سے اسلام کا نام و نشانہ مٹانے کی ٹھانی تھی، تم نے دہشتگردی کا الزام لگا کر اشتعال پیدا کیا تھا، تمہارے چہرے سے لبرل ازم کا نقاب اتر چکا ہے، اسلام بھی رہے گا، ختم نبوت ﷺ بھی اور قرآن بھی رہے گا۔
مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا آج کایہ مظاہرہ بارش کا پہلا قطرہ ہے، تحریک آگے بڑھتی رہےگی، اسرائیل پاکستان میں اپنےایجنٹ کےلیےاقوام متحدہ میں آواز اٹھاتا ہے، اپنےایجنٹ کو تحفظ دینا ہے تو اسرائیل بلالو، یہاں ان کے لیےکوئی جگہ نہیں ہے، الیکشن کے بعد ہم اقتدار میں ہوں گےیانہیں لیکن اسرائیل اور ان کے ایجنٹوں کے خلاف تحریک جاری رہےگی.
انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کے معاملات میں مداخلت کی اجازت اسرائیل کو نہیں دی جاسکتی، ہم آپ کےساتھ حالت جنگ میں ہیں اورکفر کےخلاف جنگ جاری رہےگی۔

مزید پڑھیں:  وفاق اور اکائیوں کو مل کر چلنا ہے،عطاء اللہ تارڑ