حج درخواستوں میں کمی

سرکاری سکیم کے تحت حج درخواستوں میں کمی:پالیسی تبدیلی پر غور

ویب ڈیسک :سرکاری سکیم کے تحت حج 2024 کیلئے درخواستوں میں کمی کے بعد حج بدل اور پانچ سال کے اندر دوبارہ حج کی پابندی کو ختم کرنے کی تجویز زیر غور ‘ پابندی اٹھانے کیلئے کابینہ سے منظوری لی جا ئے گی۔
حج 2024کیلئے حج در خواستوں کی وصو لی کا عمل 27 نومبر سے شروع ہوا تھا‘جس کی آخری تاریخ 12دسمبر ہے جس میں 6 دن با قی رہ گئے ہیں‘ آخری تاریخ میں توسیع کی تجویز بھی زیر غور ہے۔
بدھ کے روز گیارہ دن تک وصول ہونے والی حج درخواستوں کی تعداد 16300ہے ان میں سے 1036سپانسر شپ اسکیم کے تحت آئی ہیں‘اس تعداد کا موازنہ حج 2023سے کیا جا ئے تو یہ تعداد کافی حد تک کم ہے۔
گزشتہ حج کیلئے در خواستوں کی وصولی کا عمل 16مارچ سے شروع ہو اتھا اور صرف آٹھ دنوں میں 23مارچ تک 26 ہزار در خواستیں جمع کرائی گئی تھیں‘ گورنمنٹ زسکیم کے تحت کل 79 ہزار 922 در خواستیں جمع کرائی گئی تھیں‘72860 در خواستیں ریگولر اسکیم اور 7062 اسپا نسر شپ اسکیم کے تحت جمع کر ائی گئیں۔ کل حج کوٹہ 89605تھا۔
حج آپریشن سے وابستہ وزارت کے حکام کی رائے ہے کہ حج 2024کے لئے د رخواستیں کم تعداد میں آنے کی بڑی وجہ مہنگائی کی وجہ سے مالی استطاعت میں کمی واقع ہونا ہے۔ دوسری وجہ یہ ہے کہ پچھلے حج کیلئے در خواستوں کے ساتھ کل رقم کی بجا ئے صرف ٹوکن رقم لی گئی تھی‘ بعد میں کا میاب عازمین حج سے پوری رقم وصول کی گئی‘اس سال پوری رقم مانگی گئی ہے۔
حج میں چھ ماہ با قی ہیں اسلئے لوگ سمجھتے ہیں کہ بہت پہلے رقم لی جا رہی ہے‘ماہرین کے مطابق اب بھی اگر آخری تاریخ کے بعد ٹوکن منی کے ساتھ در خواستیں لی جائیں تو مزید لوگ آ جائیں گے۔
دوسری جانب حکومت کو چونکہ غیر ملکی زر مبادلہ کی قلت کا مسئلہ در پیش ہے اسلئے کوٹہ سرنڈر کرنے میں حکومت کو فائدہ ہے جسے موجودہ حالات میں ڈ الر کا انتظام کرنے میں مشکلات کا سا منا ہے۔

مزید پڑھیں:  بلوچ طلبہ عدم بازیابی کیس، نگران وزیراٰعظم کو پیش ہونے کا حکم