عمران خان

عمران خان کا ججز کے خط پر فل کورٹ بنانے کا مطالبہ

ویب ڈیسک: پاکستان تحریک انصاف کے بانی چیئرمین عمران خان نے اسلام آباد ہائیکورٹ کے ججوں کے خط کے ازخود نوٹس پر فل کورٹ بنانے کا مطالبہ کیا ہے ۔
اڈیالہ جیل میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے ججز نے جو خط لکھا یہ سب کو پتا ہے کہ جب سے رجیم چینج ہوئی یہ بات تب سے چل رہی ہے، تمام 6 ججز کو سیلوٹ کرتا ہوں کہ انہوں نے ہمت کی، ہمیں ججز پیغام دیتے ہیں کہ وہ بے بس ہیں۔
عمران خان نے دعویٰ کیا ہے کہ مجھے ڈرانے کے لیے بشریٰ بی بی کو زہر دیا جا رہا ہے، انہیں کچھ ہوا تو اسٹیبلشمنٹ ذمہ دار ہوگی۔
پولیس بھی کہتی ہے کہ ہم پر دباؤے، جیل کو بھی آئی ایس آئی کنٹرول کر رہی ہے احتساب عدالت کے سابق جج محمد بشیر دبا ؤکی وجہ سے پانچ مرتبہ جیل کے ہسپتال گئے۔
عمران خان کا کہنا تھا کہ عدت میں نکاح کا کیس سننے والے جج قدرت اللہ نے وکلا کو بتایا کہ اس وقت تک بیٹے کا ولیمہ نہیں کرسکتا جب تک فیصلہ نہ سناؤ ں، سائفر کیس میں میرا 342 کا بیان ہو رہا تھا جج 10 منٹ کیلئے باہر گئے اور واپس آتے ہی فیصلہ سنا دیا، تمام ججز باہر سے کنٹرول ہو رہے تھے۔
انہوں نے کہا کہ عارف علوی کے ذریعے جنرل عاصم منیر کو پیغام بھیجا تھا کہ مجھے لندن پلان کا علم ہے، چیف الیکشن کمشنر لندن پلان پر عمل درآمد کا مرکزی کردار تھا، نگران حکومت اور الیکشن کمیشن نے مل کر لندن پلان پر عمل درآمد کیا، دھاندھلی کا مقصد پی ٹی آئی کو ختم کرنا تھا، اقتدار میں بیٹھے لوگ ایجنسیوں کے بغیر ایک قدم بھی نہیں اٹھا سکتے، صرف چار حلقے کھول دیں تو حکومت گر جائے گی۔
ان کا کہنا تھا کہ شکر ہے کہ تصدق جیلانی نے کمیشن کی سربراہی سے انکار کیا اور سپریم کورٹ کا سات رکنی بینچ بنا دیا گیا، ججز کا خط لکھنا سنجیدہ معاملہ ہے اس پر فل کوٹ کو سماعت کرنی چاہیے تھی تاہم سپریم کورٹ کے 7 رکنی بینچ کا بننا کمیشن بننے سے بہتر ہے۔
عمران خان نے کہا کہ اس وقت پاکستان کے مستقبل کی جنگ چل رہی ہے، سابق کمشنر راولپنڈی کو اپ تک غائب رکھا گیا ہے، وسل بلور کو تحفظ ملتا ہے مگر کمشنر کو غائب کر دیا جاتا ہے، کمشنر راولپنڈی اور فارم 45 ایک ہی بات کی نشاندہی کررہے ہیں کیوں اس پر تحقیقات نہیں ہوئیں؟ وزیر خزانہ اور ایس آئی ایف سی جو مرضی کرلیں ملک میں سرمایہ کاری نہیں آئے کیوں کہ سرمایہ کاروں کا اعتماد ختم کر دیا گیا، ملک میں معیشت سست روی کا شکار ہے ملک تباہی کی جانب بڑھ رہا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ پنجاب میں فسطائیت ہے پرامن احتجاج بھی نہیں کرسکتے، مجھے عمرایوب سے جان بوجھ کر کٹ آف کیا گیا ہے تاکہ مشاورت نہ ہوسکے، میری بیوی کے ساتھ جو کیا گیا وہ خطرناک ہے، شہباز شریف کے خلاف تمام گواہان ہارٹ اٹیک کی وجہ سے مارے گئے، چند ماہ میں سب کی موت ہو گئی، مجھے ڈرانے کے لیے بشری بی بی کو زہر دیا جا رہا ہے، بشری بی بی کو زہر دیا جائے گا تو کیا میں خاموش بیٹھوں گا؟

مزید پڑھیں:  باجوڑ میں بارشوں سے 6 افراد جاں بحق، ندی نالوں میں طغیانی