24افراد جاں بحق

پنجاب اور بلوچستان میں آسمانی بجلی گرنے سے 24افراد جاں بحق

ویب ڈیسک: پنجاب اور بلوچستان میں گرج چمک کے ساتھ بارشیں ہوئی اور اس دوران آسمانی بجلی گرنے سے 24افراد جاں بحق ہو گئے ہیں ۔
شدید بارشوں کے دوران آسمانی بجلی سے جنوبی پنجاب میں 16اور بلوچستان کے مختلف علاقوں میں 8اموات ہوئی ہیں۔
رحیم یار خان میں7 جب کہ بہاولنگر، بہاولپور اور لودھراں میں آسمانی بجلی سے تین، تین ہلاکتیں ہوئیں۔
ریسکیو کے مطابق رحیم یارخان کے گردو نواح کے علاقوں میں تین مقامات پر آسمانی بجلی گرنے سے دو بچوں اور میاں بیوی سمیت 7افراد جاں بحق ہوئے۔
میاں بیوی گندم کی کٹائی کر رہے تھے اور بچے کھیل رہے تھے کہ آسمانی بجلی کی زد میں آگئے۔
بہاولپور میں آسمانی بجلی گرنے سے 3افراد جاں بحق ہوئے جن میں ایک خاتون اور 8سالہ بچہ بھی شامل ہے۔
لودھراں میں بھی آسمانی بجلی گرنے سے خاتون سمیت 3 افراد جاں بحق ہوئے،بہاولنگر کے علاقے فقیرالی کے قریب آسمانی بجلی گرنے سے ایک ہی خاندان کے 3افراد جاں بحق اور 2زخمی ہوگئے۔
ریسکیو حکام کے مطابق آسمانی بجلی موٹرسائیکل سوار خاندان پر گری۔ جاں بحق افراد میں باپ اور دو بیٹے شامل ہیں، ماں بیٹا زخمی ہوئے ہیں۔
ادھر بلوچستان کے مختلف علاقوں میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 8 اموات ہوئی ہیں جب کہ 6افراد زخمی ہوئے ہیں۔
چمن اور سوراب میں آسمانی بجلی سے دو ، دو ہلاکتیں ہوئیں جب کہ قلعہ عبداللہ، مسلم باغ، پشین اور ڈیرہ بگٹی میں آسمانی بجلی سے ایک ایک ہلاکت ہوئی۔
صوبے میں موسلادھار بارش اور ژالہ باری کا سلسلہ جاری ہے، ٹوبہ اچکزئی میں گاڑی اور ٹریکٹر ٹرالی پہاڑی ریلوں میں بہہ گئی جس سے ڈرائیور زخمی ہوگیا، ندی نالوں میں طغیانی ہے۔
چمن میں آج تیسرے روز بھی بجلی کی سپلائی معطل ہے، اولے پڑنے سے سیب، چیری، بادام اور خوبانی کے باغات کو نقصان پہنچا ہے۔
ادھر ترجمان بلوچستان حکومت کے مطابق صوبے میں غیر معمولی بارشوں اور موسمی صورتحال کے پیش نظر تمام کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت جاری کردی گئی ہیں۔

مزید پڑھیں:  اسٹیبلشمنٹ کے غلام نہیں بنیں گے،مولانا فضل الرحمن