ایرانی صدر

کسی بھی نئی مہم جوئی کا سخت جواب دیا جائے گا،ایرانی صدر

ویب ڈیسک: ایرانی صدرایران کے صدر ابراہیم رئیسی نے اسرائیل پر ڈرون حملوں کے بعد کہا ہے کہ جارحیت پسند کو سزا دینے کا ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کا سچا وعدہ پورا ہوگیا، کسی بھی نئی مہم جوئی کا زیادہ سخت جواب دیا جائے گا۔
ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل کے جارحانہ اقدامات کے جواب میں آپریشن جائز اوردفاع کے حقوق کے دائرہ کار میں تھا، اتحادی ممالک جارح حکومت کی اندھی حمایت بند کریں۔
ایران کے صدر ابراہیم رئیسی کا کہنا ہے کہ پاسداران انقلاب نے ایران کی تاریخ میں نیا باب رقم کیا، پاسداران انقلاب نے صیہونی دشمن کو سبق سکھا دیا۔
ایرانی صدر نے بتایا کہ ایرانی فورسز نے مشترکہ آپریشن میں اسرائیل کے فوجی اہداف کو نشانہ بنایا، دفاعی اقدام اسرائیل کی جارحانہ کارروائی کے جواب میںکیا گیا، اسرائیل خود کو کسی بین الاقوامی اصول، اخلاق اور انسانی قانون کا پابندنہیں سمجھتا۔
صدر ابراہیم رئیسی نے کہا کہ اسرائیل نے گزشتہ 6 ماہ سے فلسطینیوں کی نسل کشی جاری رکھی ہوئی ہے، اسرائیل علاقائی امن اور سلامتی کے لیے مسلسل خطرہ ہے، ایرانی مفادات کے خلاف کسی بھی نئی مہم جوئی کا زیادہ سخت جواب دیا جائے گا۔
کا کہنا تھا کہ مسلح افواج خطے میں ہونے والی پیش رفت پر نظر رکھے ہوئے ہیں، صیہونی حکومت یا ان کے حمایتی منفی رویہ دکھائیں گے تو انہیں فیصلہ کن اور کہیں زیادہ پرتشدد جواب ملے گا۔
ادھر اقوام متحدہ میں ایرانی سفیر نے کہا کہ ایران کی اسرائیل کے خلاف فوجی کارروائی دمشق میں ایرانی قونصل خانے پر اسرائیلی جارحیت کا جواب ہے۔

مزید پڑھیں:  قاتلانہ حملے میں زخمی صحافی ناصر اللہ دم توڑ گئَے