پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی چیئرمین شپ میں‌کنفیوژن سپیکر آفس نے پیدا کی، شبلی فراز

ویب ڈیسک: پی ٹی آئی کے رہنما اور سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کیلئے نام آج یا کل تک فائنل ہوجائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ سپیکر کی جانب سے شیر افضل کے نام پر اعتراض کے باعث بانی پی ٹی آئی نے دوسرا نام دیا۔
سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ میرا کردار پارٹی میں سیکرٹری جنرل کو ان کے کاموں میں معاونت فراہم کرنا تھا۔ فیصلہ سازی کا اختیار کور کمیٹی اور ایپکس کمیٹی کے پاس تھا۔
انہوں نے مزید کہا کہ کور کمیٹی کے علاوہ کچھ فیصلے باہمی مشاورت سے بھی کئے گئے۔ سیاسی عدم استحکام نے ملک کو گرفت میں لیا ہوا ہے جس سے مشکلات میں اضافہ ہو رہا ہے۔
رہنما پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ سٹیک ہولڈرز سے مذاکرات ہونے چاہئیں لیکن اس کیلئے پیرا میٹرز پہلے طے کئے جائیں۔ مذکرات کے لئے پہلے گراؤنڈ ورک، پھر ماحول کو مدنظر رکھنا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کیلئے نام آج یا کل تک فائنل ہوجائے گا۔ شیر افضل کے نام پر سپیکر کی جانب سے اعتراض کے باعث بانی پی ٹی آئی نے دوسرا نام دیا جبکہ اس منصب کیلئے حامد رضا کا نام بھی بانی پی ٹی آئی نے دیا تھا۔
شبلی فراز کا کہنا تھا کہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی چیئرمین شپ کیلئے کنفیوژن سپیکر آفس نے پیدا کی۔

مزید پڑھیں:  اورکزئی، تھانہ ڈبوری کے حوالات میں 60 سالہ شخص جاں بحق