سائبر کرائم

سائبر کرائم ایف آئی اے سے علیحدہ ،نئی اتھارٹی بنا دی گئی

ویب ڈیسک: وفاقی حکومت نے سائبر کرائم کو ایف آئی اے سے علیحدہ کر کے نئی اتھارٹی بنا دی ہے ۔
حکومت کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق سائبر کرائم جرائم کیلئے نیشنل سائبر کرائم انویسٹی گیشن ایجنسی(این سی سی آئی اے)کے نام سے نئی اتھارٹی بنا دی گئی ہے۔
نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ این سی سی آئی اے کا تحقیقاتی ادارہ ایکٹ کی شق 29 کے تحت قائم کیا گیا، این سی سی آئی اے ایکٹ کے تحت حاصل اختیارات استعمال کرے گی۔
نوٹیفکیشن کے مطابق ایف آئی اے اس ایکٹ کے تحت نامزد تحقیقاتی ادارے کے امور ادا کرنا روک دے گی، تمام اہلکار، کیسز، انکوائریز ، تحقیقات ایف آئی اے سے این سی سی آئی اے کو منتقل ہوں گے۔
نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ حکومت این سی سی آئی اے کے ڈی جی کا تقرر دو سال کے لیے کرے گی، ڈی جی این سی سی آئی اے پولیس آرڈر 2002 کے تحت آئی جی کے اختیارات استعمال کریں گے، این سی سی آئی کے معاملات کو وزارت داخلہ دیکھے گی، این سی سی آئی اے بین الاقوامی تعاون کے حوالے سے نامزدہ ادارہ ہوگا۔
نوٹیفکیشن کے مطابق سائبرکرائم کے حوالے سے ہونے والے تمام جرائم نیشنل سائبر کرائم انویسٹی گیشن ایجنسی کو بھیجے جائیں گے، سائبر کرائم سے متعلق تمام مقدمات اندراج اور پراسیکیوشن این سی سی آئی اے خود کرے گی۔
این سی سی آئی اے کے اپنے تھانے ہوں گے، افسران کو سائبر کرائمز سے متعلق خصوصی تربیت دی جائے گی۔
نوٹیفکیشن کے مطابق ملک بھرمیں سوشل میڈیا اور ایپس سے متعلق تمام معاملات این سی سی آئی اے دیکھے گی۔

مزید پڑھیں:  ایٹا مالی اخراجات اور سسٹم اپ گریڈیشن پر خودکارانداز میں کام کررہاہے، مزمل اسلم