پی ٹی آئی رہنما ریحانہ ڈار کو گرفتاری کے بعد واپس رہائشگاہ چھوڑ دیا گیا

ویب ڈیسک: پولیس نے پی ٹی آئی کی خاتون رہنما ریحانہ امتیاز ڈار کو گرفتاری کے بعد رہا کرتے ہوئے واپس ان کی رہائش گاہ پر چھوڑ دیا ہے ۔
ریحانہ ڈار کے بیٹے عمر ڈار نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ میری والدہ کو متعدد خواتین سمیت گرفتار کیا گیا، والدہ ریحانہ ڈار نے 9مئی کو احتجاج کی کال دی تھی۔
عمر ڈار نے بتایا کہ صبح سے پولیس نے جناح ہائوس سیالکوٹ کو گھیرے میں لے رکھا تھا، گھر سے نکلتے ہی والدہ کو گرفتار کر لیا گیا، میری والدہ کو خواجہ آصف کی ایما پر گرفتار کیا گیا۔
رہائشگاہ واپسی پر پی ٹی آئی رہنما ریحانہ ڈار نے کہا کہ ہماری ابھی 7 خواتین اور متعدد کارکنان پولیس کی حراست میں ہیں۔
انہوں نے کہا کہ 9مئی کے حوالے سے میں خود نکلی تھی، میرے ساتھ دہشت گردی ہوئی، وہ کون لوگ تھے جنہوں نے میرے گھر پر حملہ کیا میں جواب مانگتی ہوں۔
ریحانہ ڈار نے کہا کہ مجھے انصاف نہیں ملا مجھے کسی کا کوئی ڈر نہیں،مجھے گرفتار کر لیں کوئی ڈر نہیں، خواجہ آصف کو میرا پیغام ہے میں نے تم کو الیکشن لڑنے کے قابل نہیں چھوڑا۔

مزید پڑھیں:  محکمہ خوراک کا ایکشن، سینکڑوں مردہ مرغیاں برآمد، سپلائر پابند سلاسل