ہتک عزت بل کالا قانون، اپوزیشن کا بھرپور مزاحمت کا فیصلہ

ویب ڈیسک: ہتک عزت بل کیخلاف اپوزیشن کی جانب سے بھرپور مزاحمت کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ پیپلز پارٹی نے بھی ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔
ذرائع کے مطابق قائد حزب اختلاف عمر ایوب نے لاہور کی انسداد دہشتگردی عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ہتک عزت بل کیخلاف کہا ہے کہ آئین کے مطابق کسی کی زبان بندی نہیں کی جا سکتی۔
انہوں نے کہا کہ اس اقدام کیلئے کالا قانون بنایا جا رہا ہے اور اس قانون کے خلاف قومی اور صوبائی اسمبلی میں بھرپور مزاحمت کریں گے۔
پی ٹی آئی رہنما شبلی فراز کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ پنجاب میں ڈریکونین قانون پاس کیے جانے کی مذمت کرتے ہیں۔
دوسری جانب سابق سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر کا ہتک عزب بل کیخلاف کہنا ہے کہ اس قانون کے بعد ٹک ٹاکرز، سوشل میڈیا حتیٰ کہ واٹس ایپ میسجز پر بھی لوگوں کے خلاف شکایت اور جرمانہ کیا جا سکے گا۔
ہتک عزت قانون کے حوالے سے رہنما پیپلزپارٹی رضا ہارون کا کہنا تھا کہ اس بل کو بنا مشاورت کے اور جلد بازی میں پاس کیا گیا۔ اس پر دوبارہ غور کرتے ہوئے اتفاق رائے پیدا کیا جانا چاہئے۔

مزید پڑھیں:  وزیر اعلی خیبر پختونخوا سردار علی امین گنڈاپور نے عیدالاضحی کی نماز ڈی آئی خان میں ادا کی