مذاکرات شروع

3سالہ قرض پروگرام :حکومت اور آئی ایم ایف مذاکرات شروع

ویب ڈیسک: پاکستان نے 3سالہ نئے قرض پروگرام کے لئے عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف)کے ساتھ باضابطہ طورپر مذاکرات شروع کردیئے ہیں ۔
وزارت خزانہ کی جانب سے جاری ماہانہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آئی ایم ایف قرض پروگرام مستحکم پالیسی کے لیے انتہائی اہم ہے کیونکہ قرض پروگرام سے بیرونی سیکٹر مستحکم ہوگا اور پاکستان میں سرمایہ کاری بڑھے گی۔
رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال ترسیلات زر، برآمدات، براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری، زرمبادلہ کے ذخائر، ایف بی آر محصولات اور نان ٹیکس آمدنی میں اضافہ ہوا ہے۔
10 ماہ میں ایف بی آر محصولات میں 30.6 فیصد کا اضافہ ہوا اور رواں مالی سال نان ٹیکس آمدنی میں 94.8 فیصد کا اضافہ ریکارڈ ہوا جب کہ رواں مالی سال روپیکی قدر میں بہتری آئی اور مہنگائی میں کمی ہوئی، مئی میں مہنگائی کی شرح 13.5 سے 14.5 فیصد تک رہنے کا امکان ہے۔
رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ترسیلات زر میں گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں 3.5 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا، برآمدات میں گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں 10.6 فیصد اضافہ ہوا اور رواں مالی سال درآمدات میں 5.3 فیصد کی کمی ہوئی۔
رپورٹ کے مطابق بیرونی سرمایہ کاری میں 10 ماہ میں 93.1 فیصد اور زرمبادلہ ذخائر میں 10 ماہ میں 5ارب ڈالر تک کا اضافہ ہوا جب کہ ایک سال میں روپے کی قدر میں 9 روپے تک اضافہ ہوا۔
رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ رواں مالی سال مالی خسارے میں 26.8فیصد کا اضافہ ہوا جب کہ مہنگائی 28.2فیصد سے کم ہوکر 26فیصد پر آگئی۔

مزید پڑھیں:  لنڈی کوتل، شہید صحافی خلیل جبران کے قاتلوں کو نشان عبرت بنائیں گے، بیرسٹر ڈاکٹر سیف