مریم نواز اور رانا ثناء

مریم نواز اور رانا ثناء کی ضمانتیں منسوخ کرنے کی درخواستیں سماعت کیلئے مقرر

ویب ڈیسک: سپریم کورٹ نے پانامہ والیم ٹین کھولنے، مریم نواز اور رانا ثناء اللہ کی ضمانتیں منسوخ کرنے اور پی ٹی آئی کے استعفوں کی منظوری سے متعلق درخواستیں سماعت کے لئے مقرر کر دیں، تمام سماعتیں چیف جسٹس عمر عطاء بندیال کے روبرو ہوں گی۔ سپریم کورٹ نے آئندہ عدالتی ہفتے کے لئے کاز لسٹ جاری کر دی جس میں مریم نواز، احد چیمہ، رانا ثناء اللہ کی ضمانت منسوخی کی درخواستوں سمیت اہم مقدمات سماعت کے لئے مقرر کردیئے گئے۔ شریف خاندان کے خلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں نیب نے مریم نواز سمیت شریف خاندان کے دیگر افراد کے خلاف ضمانت منسوخی کی درخواست دائر کی ہے جسے سپریم کورٹ نے سماعت کے لئے مقرر کیا ہے۔
چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں دو رکنی بینچ 22 اگست کو سماعت کرے گا۔ بینچ میں جسٹس اطہر من اللہ بھی شامل ہیں۔ یاد رہے کہ نیب نے شمیم شوگر ملز کیس میں آمدنی سے زائد اثاثوں کے الزام میں مریم نواز کی ضمانت منسوخی کی درخواست دائر کی تھی، نیب نے 4 دسمبر 2019ء کو سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا، سپریم کورٹ میں تقریباً چار سال بعد اپیل پر پہلی سماعت ہوگی۔ اسی طرح پی ٹی آئی کے استعفوں کے معاملے پر درخواست سماعت کے لئے مقرر کر دی گئی ہے۔ چیف جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں قائم دو رکنی بینچ 21 اگست کو سماعت کرے گا۔ بنچ میں جسٹس اطہر من اللہ بھی شامل ہیں۔
اسی طرح احد چیمہ کی ضمانت منسوخی کا ایک پرانا کیس بھی سماعت کیلئے مقرر کر دیا گیا ہے۔ چیف جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں قائم دو رکنی بنچ 25 اگست کو سماعت کرے گا۔ سابق وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کی ضمانت منسوخی کی درخواست بھی سماعت کے لئے مقرر کر دی گئی، چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں دو رکنی بنچ 23 اگست کو سماعت کرے گا۔ علاوہ ازیں پانامہ کیس کی جے آئی ٹی کی تحقیقاتی رپورٹ کے والیم ٹین کے حصول سے متعلق کیس کی سماعت بھی آئندہ ہفتے سماعت کے لئے مقرر کر دیا گیا ہے، بتایا جاتا ہے کہ والیم ٹین میں پانامہ کیس سے متعلق حساس معلومات موجود ہیں جن کا تعلق مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف اور دیگر سے ہے۔

مزید پڑھیں:  الکاراز نے دوسری مرتبہ ومبلڈن اوپن جیت لیا، جوکووچ ہار گیا