دہی کا استعمال ہر عمر میں مفید، ہمیشہ رکھے جوان

ویب ڈیسک: ماہرین کی جانب سے دہی کے اتنے فوائد بیان کئَے گئے ہیں کہ جنہیں محدود صفحات پر تحریر کرنا قطعی ناممکن ہے ، یہاں پھر بھی اس کی چند ایک خصوصیات بیان کی جاتی ہیں۔ شعبہ طب سے وابستہ ماہرین کی جانب سے تجویز کیا جاتا ہے کہ دہی کا استعمال روزانہ کی بنیاد پر ہر عمر کے فرد کے لیے بے حد ضروری ہے کیونکہ یہ ایک صحت بخش اور بخش اور صحت پر جادوئی اثرات رکھنے والی غذا ہے۔ ماہرین کے مطابق دہی میں صحت برقرار رکھنے کے لیے انتہائی ضروری وٹامنز اورمنرلز کثیر مقدار میں پائے جاتے ہیں۔ طبی لحاظ سے بھی دہی ناصرف خاصی مفید اثرات کی حامل خوراک یا مکمل ڈائٹ ہے بلکہ اس کا استعمال بہت سی بیماریوں سے بھی تحفظ فراہم کرتا ہے۔
انسانی پٹھوں کیلئے مفید
غذائی ماہرین کے مطابق دہی میں چکنائی اور کیلوریز انتہائی کم مقدار میں پائی جاتی ہیں، ایک کپ دہی میں صرف 120 کیلوریز ہوتی ہیں، دہی میں دیگر ضروری غذائی اجزاء یعنی پروٹین بھی پائے جاتے ہیں، جسے انسانی پٹھوں کی نشونما کے لیے انتہائی مفید قرار دیا جاتا ہے۔
حاملہ خواتین کے لیے نہایت ضروری
دہی کی 100 گرام مقدار میں ہزاروں گُڈ بیکٹیریاز کے ساتھ 59 کیلوریز، 0اعشاریہ 4 گرام فیٹ، 5 ملی گرام کولیسٹرول، 36 ملی گرام سو ڈیم، 141 ملی گرام پوٹاشیم ، 3اعشاریہ 2 گرام شوگر، 11 فیصد کیلشیم ، 13 فیصد کوبالمین، 5 فیصد وٹامن بی 6 اور 2 فیصد میگنیشیم پایا جاتا ہے۔ اس لیے غذائیت سے بھرپور دہی ہر عمر کے انسانوں کیلئے بالعموم اور خواتین خصوصاً حاملہ خواتین کے لیے بالخصوص انتہائی مفید قرار دیا جاتا ہے۔
گھٹنوں کے درد سے نجات میں مفید
شعبہ طب سے وابستہ ماہرین نے دہی کے صحت پر ہونے والے مثبت اثرات پر وضاحت دیتے ہوئے کہا ہے کہ دہی کا استعمال مردوں کے مقابلے میں خواتین میں زیادہ پائی جانے والی بیماریوں سے بچاؤ میں ممکن ہوتا ہے۔ دہی کے استعمال سے طویل العمری میں گھٹنوں کے درد سے نجات ملتی ہے۔ دہی کے استعمال کے نتیجے میں تادیر حاصل ہونے والے فوائد بھی ان گنت ہیں۔ طبی و غذائی ماہرین کے مطابق دہی میں شامل کیلشیم اور وٹامن ڈی ہڈیوں کے لیے انتہائی اہم ہیں اور خصوصاً خواتین کو اِن ہی دو وٹامن اور منرل کی اشد ضرورت ہوتی ہے۔ اس کا روز مرہ استعمال ہڈیوں کی مضبوطی میں انتہائی اہم کردار ادا کرتا ہے جبکہ ہڈیوں کو بہت سی بیماریوں سے بھی بچاتا ہے۔
بلڈ پریشر رکھے کنٹرول میں
دہی کا استعمال بلڈ پریشر کے مریضوں کے لیے انتہائی معاون ثابت ہوتا ہے، اس میں شامل پوٹاشیم بلڈ پریشر کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔ ماہرین کے مطابق اس کے روزانہ استعمال سے جسم کو طاقت بھی ملتی ہے اور اس سے بلڈ پریشر کو کنٹرول میں رکھنے میں بھی مدد ملتی ہے۔
وزن کم کرنے میں مدد گار
ایک تحقیق کے مطابق دہی کا استعمال وزن کم کرنے میں بھی مدد گار ثابت ہوتا ہے کیونکہ اس میں موجود کیلشیم جسم میں موجود چربی کو پگھلاتا اور وزن کو بڑھنے سے روکتا ہے۔ دہی وٹامن سے بھر پور غذا ہے، اس کا ایک کپ روزانہ کھانے سے جسم میں پوٹاشیم، فاسفورس، وٹامن بی 5، آیوڈین اور زنک کی کمی دور ہوتی ہے۔
خوبصورتی کیلئے نایاب تحفہ
آج کے دور میں ہر عمر کے مرد و خواتین اپنی جلد کے حوالے سے کافی حساس ہیں اور خوبصورتی کے لیے کئی جتن کرتے ہیں جبکہ دہی میں موجود خصوصی اینٹی آکسائیڈز جلد کو بہتر نشوونما فراہم کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ جلد میں موجود ڈیڈ سیلز کا بھی خاتمہ کرتے ہیں۔ دہی میں موجود قدرتی صحت بخش اجزاء کی خصوصات جلد کو صحت مند اور بالوں کو مضبوطی فراہم کرنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔ اس میں بڑی مقدار میں (لیکٹک ایسڈ) کی خوبی موجود ہوتی ہے جو جلد اور بالوں کی نگہداشت و حفاظت کے لیے بہت کارآمد ہے۔
عمر رسیدگی کے اثرات سے محفوظ رکھے
دہی میں حیرت انگیزطور پر فری ریڈیکلز کو کنٹرول کرنے کی صلاحیت پائی جاتی ہے اور یہ عمر رسیدگی کے اثرات سے بچاؤ کی خصوصیات بھی رکھتی ہے جو جلد پر باریک لکیروں اور جھریوں کو نمودار ہونے سے روکتا ہے۔ دہی میں موجود لیکٹک ایسڈ قبل ازوقت جلد کو بڑھتی عمر کے اثرات سے محفوظ رکھنے میں معاونت فراہم کرتا ہے۔
جلد کو رکھے جھریوں سے دور
جلد کو جھریوں سے دور، جوان، چمکدار رکھنے کے لیے اس کی مدد سے ایک آزمودہ فیس پیک تیار کیا جا سکتا ہے۔ ایک چمچہ زیتون کا تیل اور تین چمچے دہی کو مکس کرکے 30منٹ تک چہرے پر لگا کر چھوڑ دیں۔ اس فیس پیک کے بہترین نتائج حاصل کرنے کے لیے ہفتے میں تین بار ضرور اس کا استعمال کریں۔ اس عمل سے جلد ملائم، نکھری نکھری تروتازہ ہو جائے گی۔

مزید پڑھیں:  آئی پی پیز معاہدوں کی منسوخی کیلئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر