شوکت ترین کی آڈیو

حکومت کا شوکت ترین کی آڈیو کا فرانزک کروانے کا فیصلہ

وفاقی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ سابق وفاقی وزیر خزانہ اور پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر شوکت ترین کی پنجاب اور خیبرپختونخوا کے وزراء خزانہ کے ساتھ آڈیو لیک کی فرانزک تحقیقات کروائی جائینگی
ویب ڈیسک: تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر قانون سنیٹر اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ پارلیمان میں جاتے ہوئے تمام اراکین حلف لیتے ہیں کہ ملکی مفاد کا تحفظ کریں گے، خیبرپختونخواہ کے وزیر خزانہ تیمور جھگڑا آئی ایم ایف کو خط لکھ کر شاید اپنے حلف کی پاسداری سے بھی گئے ہیں۔
وزیر قانون نے کہا کہ شوکت ترین سے توقع نہیں تھی انہوں نے سیاست کو ریاست پر مقدم رکھا، مملکت خداداد سے شوکت ترین کا یہ عمل بغاوت کے زمرے میں آتا ہے۔
واضح رہے کہ چند روز قبل سابق وزیر خزانہ اور پی ٹی آئی رہنما شوکت ترین کی آڈیو لیک ہوئی تھی جس میں وہ خیبرپختونخواہ اور پنجاب کے وزیرخزانہ سے آئی ایم ایف شرائط نہ ماننے کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے دونوں وزرا کو آئی ایم ایف کو جوابی اور وضاحتی خط لکھنے کا مشورہ دے رہے تھے۔
دوسری جانب پی ٹی آئی رہنماؤں نے شوکت ترین کی گفتگو پر ردعمل دیتے ہوئے اسے ٹھیک قرار دیا جبکہ سابق وزیر خزانہ نے کہا کہ انہوں نے ملک کے ساتھ کوئی غداری نہیں کی علاوہ ازیں خیبرپختونخوا کے وزیر خزانہ نے آڈیو لیگ ہونے پر کہا کہ وہ اپنی قوم کو مدنظر رکھتے ہوئے ہی فیصلہ کرتے ہیں۔
وفاقی وزیر قانون نے کہا کہ حکومت بھی اس بارے میں وزارت قانون اور وزارت داخلہ میں مشاورت کر رہی ہے، ہم نے آڈیو گفتگو کی فرازک آڈٹ کا فیصلہ کیا ہے، رپورٹ آنے کے بعد مشاورت کا عمل مکمل ہوتا ہے تو اس پر بھی قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی، پاکستان کی ریاست کی طرف اٹھنے والے ہاتھ، پاکستانی مفاد کے خلاف بولنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہو گی، اور آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا۔

مزید پڑھیں:  کاٹلنگ :نجی میڈیکل سنٹر کے ڈاکٹروں کی مبینہ غفلت سے بچہ جاں بحق