افغانستان کے مسعود فاونڈیشن کے چئیرمین کی وزارتِ خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ملاقات

ویب ڈیسک (اسلام آباد): افغانستان میں مسعود فاونڈیشن کے چئیرمین احمد ولی مسعود کی وزارتِ خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ملاقات، مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دوران ملاقات افغان امن عمل سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال، وزیر خارجہ نے احمد ولی مسعود اور ان کے وفد کو وزارتِ خارجہ کی آمد پر خوش آمدید کہا، پاکستان، افغانستان میں امن کا سب سے زیادہ خواہش مند ہے۔ اسلئے پاکستان، افغان امن میں خلوص نیت کیساتھ مصالحانہ کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے۔

وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ پاکستان کی مصالحانہ کاوشوں کے نتیجے میں امریکہ اور طالبان کے مابین مذاکرات کامیابی سے ہمکنار ہوئے اور امن معاہدہ طے پایا، ہم سمجھتے ہیں کہ افغانستان میں امن پورے خطے کیلئے ناگزیر ہے، بین الافغان مذاکرات کا انعقاد، افغانستان کے مسئلے کے جامع اور مستقل سیاسی حل کیلئے انتہائی اہم موقع ہے، افغانستان پر تشدد واقعات میں اضافہ تشویش ناک ہے، افغانستان میں ہرتشدد واقعات میں کمی لانے اور حالیہ جنگ بندی کیلئے تمام فریقین کو سنجیدہ کوششیں کرنے کی ضرورت ہے، بعض بیرونی قوتیں افغان امن عمل کو ناکام بنانے کیلئے متحرک ہیں ان عناصر پر گہری نظر رکھنے کی ضرورت ہے، پرامن، خوشحال اور مستحکم افغانستان کیلئے تمام فریقین کو مشترکہ کوششیں بروئے کار لانے کی ضرورت ہے، افغان امن عمل نے دہائیوں سے وطن واپسی کے منتظر افغان مہاجرین کے اندر امید کی کرن پیدا کی ہے، پاکستان، افغان مہاجرین کی باوقار وطن واپسی کا خواہاں ہے، پاکستان، افغانستان کے امن و استحکام اور تعمیر و ترقی کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کیلئے پرعزم ہے۔

وزیر خارجہ نے اراکین وفد کو پاکستان اور افغانستان کے مابین عوامی سطح پر روابط کے فروغ کیلئے کیے گئے اقدامات سے بھی آگاہ کیا، پاکستان نے تعلیم کے شعبے میں افغان طلباء کی معاونت کیلئے چھ ہزار وظائف کا اجراء کیا، پاکستان نے افغانستان کی تعمیر و ترقی سے متعلق مختلف منصوبہ جات کیلئے ایک ارب امریکی ڈالر کی خطیر رقم مختص کی، یہ اقدامات پاکستان کی طرف سے افغانستان کے ساتھ گہرے دو طرفہ تعلقات کا مظہر ہیں، پرامن اور مستحکم افغانستان پاکستان سمیت پورے خطے کیلئے ناگزیر ہے، سیکرٹری خارجہ سہیل محمود اور وزیراعظم کے نمائندہ خصوصی برائے افغانستان ایمبیسڈر محمد صادق بھی اس موقع پر موجود تھے۔