ریاست مدینہ اور عمران خان

ریاست مدینہ اور عمران، استغفراللہ، نعوذ بااللہ، انا للّٰہ

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے وزیراعظم عمران خان کے مضمون پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران صاحب دین اسلام اور اس کی مقدس اصلاحات کا ناجائز فائدہ اٹھانے کی کوشش کر رہے ہیں، وہ مذہبی ”ایکسپلوئیٹر” ہیں ،عمران صاحب کا مدینہ کی ریاست پہ مضمون لکھنا اس چور کی مانند ہے جوچوری پکڑے جانے پہ مسجد میں چھپ جائے ۔ انہوں نے کہاکہ عمران صاحب اپنی لوٹ مار، نااہلی ، نالائقی چھپانے کے لئے اسلام اور ریاست مدینہ جیسے مقدس ناموں کا استحصال کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عمران صاحب جیسا شخص ہی یہ مضمون لکھ سکتا ہے جو حالت انکار، ہٹ دھرمی، ڈھٹائی اور بے شرمی کی غیر معمولی انتہا پر فائز ہے۔ تین سال میں عمران صاحب نے ملک کے ساتھ جو کیا اور کہاکہ اس کے بعد سراپا ڈھٹائی، بے شرمی، حقیقت سے انکاری شخص ہی ایسا مضمون لکھ سکتا ہے ۔
انہوں نے کہا کہ اپنی لوٹ مار ، نالائقی اور نااہلی میں ڈوبا شخص اپنی ڈوبتی کشتی بچانے کے لئے ریاستِ مدینہ پہ درس نہ دے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست مدینہ اور عمران صاحب، استغفراللہ، نعوذبااللہ، انا للّٰہ ،تین سال میں عمران صاحب نے ہر قدم پر ریاست مدینہ کے اصولوں اور روح کی نفی کی ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست ِ مدینہ پہ عمران خان کا مضمون لکھنا اِس بات کا ثبوت ہے کہ اْن کے گھبرانے اور گھر جانے کا وقت شروع ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس کے قول و فعل میں صرف اور صرف تضاد ہو وہ مدینہ کی ریاست پہ درس دے رہا ہے ،مدینہ کی ریاست کی قانون کی بالادستی کی بات کرنے والا چار سال سے اپنے ہر کیس سے مفرور ہے ۔

انہوں نے کہا کہ بہتان ، الزام بغض ، نفرت عدم برداشت اور جھوٹ کا مجسمہ کس بے شرمی اور ڈھٹائی سے مدینہ کی ریاست پہ مضمون لکھ رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مہنگائی سے عوام کا گلا کاٹ کر انصاف اور اصولوں کا مضمون لکھنا بے شرمی اور منافقت ہے ،طاقتور، مکار سیاستداں اپنی ناکامیوں کو چھپانے کے لئے مضمون لکھ کر قوم کو گمراہ کرنے کی ناکام کوشش کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مری میں بے گناہ جاں بحق ہوجائیں، مہنگائی سے عوام مر جائیں اور لیکچر ریاست مدینہ کے ؟ فارن فنڈنگ کے شکنجے میں آنے پر حقائق چھپاتا اور دنیا کو قانون کی بالادستی کادرس دیتا ہے،اخلاقی پستی کی علامت شخص کس منہ سے مدینہ کی ریاست کی اخلاقیات کا درس دے رہا ہے؟۔ ریاست مدینہ کا جھوٹا دعویدار ، بیس کلو میٹر پر لوگ زندگیوں سے محروم، ہزاروں ابتلا میں اور یہ محل میں سوتا رہا۔

مزید دیکھیں :   سرکاری ہیلی کاپٹرکااستعمال،عمران کیخلاف نیب کودرخواست