پی آئی اے کو ملائشیا سے مسافروں کی واپسی کے لیے ایک کروڑ روپے سے زائد خسارہ برداشت کرنا پڑا

ویب ڈیسک : پی آئی اے کا طیارہ ملائشیا میں روکے جانے کا معاملہ، شعبہ مارکیٹنگ، انجینئرنگ، فلائٹ آپریشن اور کوآپریٹیو پلاننگ کی لاپرواہی سے طیارہ ملائشیا میں پھنسا، ذرائع کے مطابق پی آئی اے کو ملائشیا سے مسافروں کی واپسی کے لیے ایک کروڑ روپے سے زائد خسارہ برداشت کرنا پڑا، پی آئی اے کے تین اہم افسران کے خلاف تحقیقات بھی شروع کردی گئیں ہیں۔ بوئنگ 777طیارے ہونے کے باجود لیز پر حاصل کیے گئے طیارے کو وہاں روانہ کیا گیا، یورپ اور برطانیہ کا فضائی آپریشن بھی کئی ماہ سے بند ہے، کسی طیارے سے متعلق کیس ہونے پر اسے اپنے ملک میں ہی آپریٹ کیا جاتا ہے، کورونا کی صورتحال میں کئی فضائی کمپنیوں نے لیزنگ پر حاصل کیے طیارے واپس کردیئے تھے، پی آئی اے کے پاس دو لیز پرحاصل کیے گئے طیارے ہیں جنہیں واپس نہیں کیا گیا۔