اسٹیبلشمنٹ

جس نے ملک چلاناہے وہ اسٹیبلشمنٹ سے نہیں لڑسکتا،عمران خان

ویب ڈیسک :چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ فوج کے بغیر پاکستان آگے نہیں بڑھ سکتا۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اپنے ساتھ ہونے والی زیادتیاں معاف کردوں گا جبکہ اعظم سواتی اور شہباز گل کے ساتھ ہونے والے سلوک کو بھی معاف کرنے کے لیے تیار ہیں۔ مجھ پر گولیاں چلانے والوں کو بھی معاف کرنے کو تیار ہوں۔انہوں نے کہا کہ فوج کے بغیر پاکستان آگے نہیں بڑھ سکتا، کورونا اور پولیو ویکسینیشن کے دوران آرمی کو بہت قریب سے دیکھا ہے اور فوج نے کورونا اور پولیو ویکسینیشن کے لیے قابل قدر کام کیا ہے۔عمران خان نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ کو بھی سوچنا ہو گا کہ ملک گڑھے میں گر چکا ہے اور جس نے پاکستان کو چلانا ہے وہ اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ نہیں لڑسکتا تاہم اسٹیبلشمنٹ کی سمت کا تعین کرنا ضروری ہے۔
فوج اچھائی کی سب سے بڑی قوت بن سکتی ہے۔ملکی خزانہ کو لوٹنے والوں کے علاوہ سب سے مفاہمت پر یقین رکھتا ہوں۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ میں بہت جلد انتخابات دیکھ رہا ہوں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ میں سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ پنجاب کی خواتین اراکین اتنا اچھا پرفارم کریں گی اور پنجاب میں ہماری خواتین کو غیر معمولی لالچ دی گئی مگرانہوں نے سب کچھ ٹھکرا دیا۔میں چودھری پرویزالہٰی کی بھی قدر کرتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ چودھری پرویز الٰہی نے لالچ کے ہر حربے کو ٹھکرا دیا جبکہ پرویز الٰہی اور مونس الٰہی پر کیسز بنانے کے لیے ڈرایا بھی گیا، مونس الٰہی بہت سمجھدار نوجوان ہے وہ ڈٹ گیا۔

مزید دیکھیں :   پیپلزپارٹی نے عمران خان کے قتل سے متعلق الزامات مسترد کردیے