خیبرپختونخوا پولیس

خیبرپختونخوا پولیس پر 4ماہ میں شدت پسندوں کے77حملے

ویب ڈیسک:پشاور سمیت خیبرپختونخوامیں پولیس پر4ماہ کے دوران شدت پسندوں نے77حملے کئے جن میں 120پولیس اہلکار/افسران شہید جبکہ 333زخمی ہوئے ۔ واضح رہے کہ 30اپریل کو بھی پشاور کے علاقہ ترناب میں حساس ادارے کے اہلکار کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا۔اس حوالے سے محکمہ پولیس خیبرپختونخوا کی جانب سے جاری اعدادوشمار کے مطابق پولیس پر حملوں کے واقعات پشاور،مردان، ملاکنڈ، کوہاٹ ، بنوں اورڈیرہ اسماعیل خان میں پیش آئے ہیں جہاں ان چار مہینوں میں بنوں میں سب سے زیادہ 24حملے کئے گئے جبکہ ڈیرہ میں 23اورپشاور میں پولیس پر حملوں کے 15واقعات پیش آچکے ہیں۔
ان چار ماہ میں صوبہ بھر میں شدت پسندوں کے 61حملے پسپاکئے گئے جبکہ سب سے زیادہ پولیس اہلکاروں کی شہادت پشاور میں ہوئی جہاں پولیس لائنز خودکش دھماکے کے نتیجے میں80سے زائد پولیس اہلکار/افسران شہید ہوگئے تھے۔ جنوری کے بعد پولیس پر حملوں میں کمی واقع ہوئی ، ماہ جنوری میں 30حملے ہوئے جبکہ فروری میں 25،مارچ 15اوراپریل میں 7حملے کئے گئے ۔ان حملوں میں پشاور میں مجموعی طور پر245، ملاکنڈ میں 46، ڈی آئی خان 24 اور بنوں میں 13 اہلکار زخمی ہوئے۔ رپورٹ کے مطابق خیبر پختونخوا میں سب سے زیادہ حملے جنوبی اضلاع میں ہوئے۔

مزید پڑھیں:  الیکشن کمیشن کیلئَے تیار ریکارڈ پولیس لے گئی، شبلی فراز