Violence

بھینسوں کے باڑے میں باندھ کرنوجوان پروحشیانہ تشدد،گوبرکھلایاگیا

ویب ڈیسک(بالاکوٹ )تھانہ گڑھی حبیب اللہ کے علاقہ بوئی میں ظلم و تشدد کے تمام ریکارڈ توڑ دئیےگئےنوجوان کورات بھر برہنہ کرکےجسم کےمختلف حصوں پرتشدد کیا جاتارہا ۔

بھینسوں کے باڑے میں رات کو بھینسوں کاپیشاب بھی پلایاجاتارہا،نوجوان کی پرتشدد اوربرہنہ ویڈیو سوشل میڈیا پرسامنےآنے کےبعد پولیس کی دوڑیں لگ گئیں۔

ذرائع نے مشرق کو بتایابوئی کے علاقہ ڈھیری سیری کےرہائشی سابق ایس ایچ او میرا فضل کابیٹا عبدالرشید کی بیوی کو ساتھ لےگیاتھاجس کی تھانہ گڑھی حبیب اللہ میں اغواء کی ایف آئی آربھی درج ہےتاہم لڑکی مبینہ طورپرکچھ دن بعد گھرواپس آگئی ۔

جس کےبعد عبدالرشید وغیرہ لڑکی کےذریعے اجمل کو بوگراں بگوتر گاوں میں بلاکراسے بھینسوں کے گوال میں لےگئے اجمل کو برہنہ کرکےبدترین تشدد کا نشانہ بناتےرہے پوری رات اجمل کوبھینسوں کاپیشاب تک پلایا گیااس کےجسم کےمختلف حصوں کو نوچتےرہے اورلوہےکےراڈوں اورمختلف آلات سےاس پرتشدد کرتےرہے ۔

تشدد کےدوران اجمل نامی نوجوان روتارہاواسطےدیتارہامگراس کی کوئی بات سنی نہیں گئی بعد میں پولیس کو اطلاع دی اوررات تین بجے پولیس اجمل کو ملزمان سے جہاں رسیوں کے سال مویشیوں کے باڑے میں باندھ رکھا تھا چھڑاکرتھانے لےگئی جہاں پرعبدالرشیدسمیت چارافراد کےخلاف زیر دفعہ 337کا مقدمہ درج کیا گیا بعد میں ملزمان نےعدالت سےاپنی عبوری ضمانتیں کروالیں۔